زوہیب حسن کو ہرجانہ کیس میں جواب جمع کرانے کی مہلت مل گئی

معروف گلو کارہ نازیہ حسن کے بھائی گلوکار زوہیب حسن کو سندھ ہائی کورٹ نے ہر جانہ کیس میں جواب جمع کرانے کے لیے 10 نومبر تک کی مہلت دے دی۔

سندھ ہائی کورٹ میں معروف گلوکارہ نازیہ حسن کے سابق شوہر اشتیاق بیگ کی زوہیب حسن کے خلاف 1 ارب روپے کے ہرجانے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی۔

زوہیب حسن کی جانب سے ستار پیرزادہ ایڈووکیٹ نے وکالت نامہ جمع کرا دیا اور دائر دعوے کا جواب جمع کرانے کے لیے مہلت طلب کر لی۔

عدالت نے دائر دعوے کی سماعت 10 نومبرتک ملتوی کرتے ہوئے زوہیب حسن کو آئندہ سماعت تک اس ایشو پر بات کرنے سے روکنے سے متعلق حکمِ امتناع میں توسیع کر دی۔

واضح رہے کہ عدالت نے زوہیب حسن کو اشتیاق بیگ کے خلاف کسی قسم کا بیان دینے سے روک رکھا ہے۔

دوسری جانب پاکستانی گلوکارہ کے شوہر اشتیاق بیگ نے نازیہ حسن کی موت سے متعلق زوہیب حسن کے الزامات مسترد کرتے ہوئے زوہیب حسن کے خلاف 1 ارب روپے کے ہرجانے کا دعویٰ دائر کیا تھا۔

اشتیاق بیگ نے نازیہ حسن کی موت سے متعلق زوہیب حسن کے الزامات کو بے بنیاد اور من گھڑت قرار دیتے ہوئے مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نازیہ حسن کی موت کی تحقیقات اسکاٹ لینڈ یارڈ نے بھی کی تھی، اسکاٹ لینڈ یارڈ نے بھی قرار دیا تھا کہ موت کی وجہ کینسر تھی۔

اشتیاق بیگ کا کہنا تھا کہ زوہیب حسن نے جو الزامات عائد کیئے وہ بہت سنگین ہیں، الزامات کا مقصد میری شہرت کو نقصان پہنچانا تھا، وکیل کے ذریعے 1 ارب روپے کے ہرجانے کا نوٹس جاری کیا تھا لیکن زوہیب حسن ایک ماہ بعد بھی جواب دینے میں ناکام رہے اور انہوں نے الزامات واپس نہیں لیئے۔

Leave a Comment

Optimized with PageSpeed Ninja