وزیراعظم عمران خان کا اپنی ٹیم میں رد و بدل کرنے کا فیصلہ

آئندہ چند روز میں وفاقی کابینہ میں تبدیلیاں ہوں گی، وزیراعظم کا بہتر حکمرانی کے حصول کے لیے چند بڑے سربراہوں کو ہٹانے کا فیصلہ

47

وزیراعظم عمران خان نے اپنی ٹیم میں ردو بدل کا فیصلہ کیا ہے۔ آنے والے دنوں میں وزات داخلہ اور توانائی میں تبدیلیاں ہونے کا امکان ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے قیمتوں میں اضافے کے نتیجے میں اور بہتر حکمرانی کے حصول کے لیے چند بڑے سربراہوں کو ہٹا کر اہم ارکان میں ردو بدل کا فیصلہ کیا ہے۔

 

یہ بھی پڑھیں:    یونان میں پھنسے سینکڑوں مہاجرین کی قسمت کھل گئی

ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ میں کچھ اہم تبدیلیاں بھی ممکن ہیں جہاں محکموں میں ہٹائے جانے اور اس میں ردوبدل کرنے کی توقع کی جا رہی ہے۔بتایا گیا ہے حکومت کے اندر کچھ طاقتور حلقے معاشی کارگردگی خصوصا کھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں اضافے پر ناراض ہیں۔

گندم اور چینی کے طویل بحران کے ساتھ ساتھ اشیاء خوردو نوش کی قیمتوں میں اضافے نے حکومت پر دباؤ ڈالا لیکن متعلقہ اقتصادی وزارتوں نے اہم فیصلے لینے میں وقت لیا۔

اب حکومت اس نتیجے پر پہنچ رہی ہے کہ معاشی محاذ پر نئے چہرے لانے کے لیے اس کے پاس کوئی دوسرا باقی نہیں بچا ہے۔وفاقی کابینہ میں کلیدی تبدیلیوں کے سلسلے میں وفاقی دارالحکومت پچھلے دو دونوں سے افواہوں کی لپیٹ میں ہے۔

سابق مشیر خزانہ شوکت ترین اور وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے محصولات وقار مسعود کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ انہیں اہم عہدے تفویض کیے جا سکتے ہیں۔

تاہم ابھی تک کسی نے ان سے رابطہ نہیں کیا لیکن جب پی ٹی آئی کی قیادت والی حکومت نے ان سے کہا تھا کہ موجودہ حکومت میں شامل ہو جائیں تو شوکت ترین نے حکومت میں شامل ہونے سے انکار کر دیا تھا۔

اس کی وجہ یہ تھی کہ اس وقت ان کے خلاف چار مقدمات زیر التوا تھے۔وزات داخلہ ، توانائی اور دیگر سے متعلق کچھ اور تبدیلیاں آئندہ چند روز میں ہونے کا امکان ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.