طالبان وزیر خارجہ کا امداد کے وعدوں پر عالمی برادری کا شکریہ، ’امریکہ بڑا ملک ہے، دل بھی بڑا ہونا چاہیے‘

4

طالبان کے وزیرِ خارجہ امیر خان متقی نے آج کابل میں پاکستانی سفیر منصور علی خان سے بھی ملاقات کی ہے۔ آج اپنی پریس کانفرنس کے دوران امیر خان متقی نے کہا کہ طالبان عالمی امداد کو ضرورت مندوں تک پہنچانے کی بھرپور کوشش کریں گے۔

طالبان کے وزیرِ خارجہ امیر خان متقی نے آج کابل میں پاکستانی سفیر منصور علی خان سے بھی ملاقات کی ہے۔ آج اپنی پریس کانفرنس کے دوران امیر خان متقی نے کہا کہ طالبان عالمی امداد کو ضرورت مندوں تک پہنچانے کی بھرپور کوشش کریں گے۔

طالبان کے وزیرِ خارجہ امیر خان متقی نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ ملک کی امداد بحال کی جائے۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق اُنھوں نے کابل میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری کو اپنی امداد سیاست کی نذر نہیں کرنی چاہیے۔

امیر خان متقی نے مزید کہا کہ تمام سفارت خانوں کو پیغام بھیج دیا گیا ہے کہ سفارت کار اپنا کام معمول کے مطابق جاری رکھیں۔

اس کے علاوہ اے ایف پی کے مطابق اُنھوں نے افغانستان کے لیے ایک ارب ڈالر سے زائد امداد کے وعدے پر عالمی برادری کا شکریہ ادا کیا اور امریکہ سے ’ظرف‘ کا مظاہرہ کرنے کے لیے کہا۔

اُنھوں نے کہا: ’امارتِ اسلامی اس امداد کو ضرورت مند لوگوں تک شفاف انداز میں پہنچانے کے لیے بھرپور کوشش کرے گی۔‘ ’امریکہ بڑا ملک ہے، اس کا دل بھی بڑا ہونا چاہیے۔‘

امیر خان متقی نے کہا کہ افغانستان کو حال ہی میں پاکستان، قطر اور ازبکستان سے امداد ملی ہے تاہم اُنھوں نے مزید تفصیلات واضح نہیں کیں۔

اُنھوں نے کہا کہ اُن کی چین کے سفیر سے کورونا وائرس ویکسین اور دیگر انسانی مسائل کے متعلق بات چیت ہوئی ہے اور بیجنگ نے ڈیڑھ کروڑ ڈالر کا اعلان کیا ہے جو ’جلد‘ ہی افغانستان کے لیے دستیاب ہو جائیں گے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.